• Breaking News

    کم عمری میں اوڈیشن کے نام پر استحصال نہیں ہوا



    ماضی میں فلموں میں خود کو عریاں مناظر دیے جانے کی شکایتیں کرنے والی 34 سالہ ہولی وڈ اداکارہ میگن فاکس کا حال ہی میں ایک دہائی پرانا انٹرویو سوشل میڈیا پر وائرل ہوا تھا۔

    مذکورہ انٹرویو میں وہ اپنے کیریئر کے آغاز پر بات کرتی دکھائی دیں اور انہوں نے اعتراف کیا کہ جس وقت انہوں نے پہلا اوڈیشن دیا اس وقت ان کی عمر بمشکل 15 برس تھی۔

    سال 2009 میں دیے گئے انٹرویو میں میگن فاکس نے بتایا کہ جب انہوں نے بیڈ بوائز 2 کے لیے اوڈیشن دیا تو انہیں نیم عریاں کیا گیا اور انہیں صرف بکنی اور زیر جامہ پہن کر بڑی ایڑھی والے جوتے پہننے کا کہا گیا۔

    ساتھ ہی انٹرویو میں انہوں نے بتایا تھا کہ 2007 میں ریلیز ہونے والی فلم ٹرانسفارمرز کے اوڈیشن کے دوران بھی انہیں سیکس سمبل کے طور پر دیکھ کر اوڈیشن لیا گیا۔

    اداکارہ کے پرانے انٹرویو کے وائرل ہونے کے بعد کئی لوگوں نے بیڈ بوائز 2 اور ٹرانسفارمرز کے فلم سازوں کے خلاف لوگوں نے احتجاج شروع کرتے ہوئے میگن فاکس سے ہمدری کا اظہار کیا۔

    برطانوی اخبار دی گارجین کے مطابق لوگوں نے پرانے انٹرویو کے بعد میگن فاکس کا اوڈیشن لینے والے فلم سازوں پر اداکارہ کا کم عمری میں جنسی استحصال کرنے کا الزام بھی لگایا اور فلم سازوں پر شدید تنقید کی گئی۔

    میگن فاکس کے مذکورہ انٹرویو کی تصاویر بھی وائرل ہوگئیں اور لوگوں نے لکھا کہ اداکارہ کو اس وقت نیم عریاں کرکے سیکس سمبل کے طور پر لیا گیا جب ان کی عمر 15 برس تھی۔

    لوگوں کے شدید رد عمل کے بعد اداکارہ نے اپنی طویل انسٹاگرام پوسٹ میں واضح کیا کہ ان کا اوڈیشن کے نام پر استحصال نہیں ہوا۔

    میگن فاکس نے طویل انسٹاگرام پوسٹ میں وضاحت کی کہ بیڈ بوائز 2 کے اوڈیشن کے وقت ان کی عمر 16 برس تک تھی جب کہ ٹرانسفارمرز کے اوڈیشن کے وقت وہ 19 یا 20 برس کو ہوچکی تھیں۔

    انہوں نے بتایا کہ جب ان کا اوڈیشن لیا گیا اس وقت دوسرے لوگ بھی موجود تھے اور جو ان کے ساتھ کیا گیا وہ معمول کا حصہ تھا۔

    انہوں نے واضح کیا کہ وہ اوڈیشن کے وقت کم عمر نہیں تھیں بلکہ بالغ تھیں اور وہ نہیں سمجھتیں کہ ان کے ساتھ اوڈیشن کے نام پر کوئی استحصال کیا گیا ہے۔

    دلچسپ بات یہ ہےکہ میگن فاکس ماضی میں ٹرانسفارمرز کے فلم ساز مائیکل بے کے حوالےسے پہلے بھی سخت باتیں کہہ چکی ہیں اور اعتراف کر چکی ہیں وہ کام کے حوالے سے ہٹلر کی طرح بتاؤ کرتے ہیں۔

    اس سے زیادہ حیرانی کی بات یہ ہے کہ میگن فاکس، ماضی میں بار بار خود کو فلموں میں عریاں کردار دیے جانے کی شکایت بھی کر چکی ہیں اور ستمبر 2019 میں ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا تھا کہ مسلسل عریاں کردار ادا کرنے کی وجہ سے وہ نفسیاتی مسائل کا شکار بھی بنیں۔

    شوبز ویب سائٹ ’ای آن لائن‘ کو دیے گئے انٹرویو میں میگن فاکس نے اعتراف کیا تھا کہ اس فلم میں عریاں کردار ادا کرنے کی وجہ سے وہ شدید نفسیائی مسائل سے دوچار ہوئیں۔

    کوئی تبصرے نہیں