.....................
HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » خبریں » سیاسیات » کوئٹہ میں نیا پاکستان ہاﺅسنگ اسکیم کا سنگ بنیاد

کوئٹہ میں نیا پاکستان ہاﺅسنگ اسکیم کا سنگ بنیاد

پڑھنے کا وقت: 4 منٹ

محمد کاظم …..
بد امنی کے واقعات کے حوالے سے اپریل کے مہینے میں بلوچستان حکومت کی پریشانیوں میں کوئی کمی آنے کی بجائے ان میںاضافہ ہوتا رہا جس کا اندازہ اس سے لگایا جاسکتا ہے کہ کوئٹہ خود کش حملے کے واقعے کے خلاف ہزارہ قبیلے کا احتجاج بمشکل تھما تھا کہ گوادر اور کراچی کے درمیان سفر کرنے والے 14مسافروں کو بسوں سے اتار کر قتل کردیا گیا۔
یہ اندوہناک واقعہ کوسٹل ہائی وے پر ضلع گوادر کی تحصیل اورماڑہ کے علاقے میں پیش آیا۔ سرکاری حکام کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے اورماڑہ میں بزی ٹاپ پر کراچی اور کوئٹہ کے درمیان چلنے والی چار پانچ مسافر بسوں کو روکا اور شناختی کارڈ چیک کرنے کے بعد ان میں سے 14افراد کو اتارنے کے بعد قتل کیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ یہ تمام افراد سیکورٹی فورسز کے اہلکار تھے۔ بلوچستان میں حالات کی خرابی کے بعد سے کوئٹہ سبی ہائی وے اورکوئٹہ قلات ہائی وے پر مسافروں کو گاڑیوں سے اتار کر قتل کرنے کے واقعات پیش آتے رہے لیکن گوادر اور کراچی کے درمیان ساحلی شاہراہ پر پیش آنے والا یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ تھا۔

عمران خان کا کہنا تھاکہ نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کرانا انتہائی ضروری ہے۔ حکومت ملک میں دہشت گردی اور انتہاءپسندی کا خاتمہ کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ وہ دن دور نہیں کہ ہم اس ملک میں اپنے عوام کو ایک پرامن ماحول فراہم کریں۔
وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیاءاللہ کا کہنا ہے کہ اس واقعے کے بارے میں تحقیقات کا حکم دیا گیا ہے تا ہم انہوں نے کہا کہ سابقہ واقعات کی طرح اس واقعے میں بھی بھارت ملوث ہے۔ انہوں نے یہ بھی الزام دہرایا کہ بھارت یہاں بد امنی پھیلانے کے لیے افغان سر زمین کو استعمال کررہا ہے۔ جہاں بلوچستان کے وزیر داخلہ نے بھارت کو اس واقعے کے حوالے سے مورد الزام ٹہرایا ہے وہاں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا بھی یہ کہنا ہے کہ بلوچستان میں بد امنی پھیلانے والے بعض تنظیموں کی کمین گاہیں ایران میں ہیں اور وہ وہاں سے آکر بلوچستان میں مداخلت کرتی ہیں۔ ایک بریفنگ کے دوران شاہ محمود قریشی کا یہ بھی کہناتھا کہ اس حوالے سے ایران کو ثبوت بھی فراہم کیئے گئے ہیں۔ یہ پہلا موقع ہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے بڑی سطح پر یہ بات کی گئی ہے۔
ان سانحات پر تشویش اور تنقید کے درمیان وزیر اعظم عمران خان نے کوئٹہ کا مختصر دورہ کیا۔ ان کا یہ دورہ کوئٹہ میں نیا پاکستان ہاﺅسنگ اسکیم کا سنگ بنیاد رکھنے کے حوالے سے تھا۔ انہوں نے اس دورے کے موقع پر کوئٹہ میں ایک لاکھ دس ہزار گھروں کی تعمیر کا سنگ بنیاد رکھا، جبکہ یہ بھی بتایا گیا کہ گوادر میں بھی ایک لاکھ دس ہزار گھر تعمیر کیئے جائیں گے، جن میں سے 54ہزار ملازمین اور 54ہزار ماہی گیروں کے لیے ہوں گے۔
اس موقع پر وزیر اعظم نے جو خطاب کیا اس میں انہوں نے ایک ہفتے میں گوادر اور کوئٹہ میں رونما ہونے والے دو بڑے واقعات کا ذکر نہیں کیا تاہم انہوں نے اپنے سیاسی مخالفین کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ ان کا یہ کہنا تھا کہ شریف اور زرداری خاندان کی بدعنوانی کے حوالے سے ہر روز نئی چیزیں سامنے آرہی ہیں جس کی وجہ سے وہ خوفزدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہی وجہ ہے وہ حکومت گرانے کی بات کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ملکی خزانے کو لوٹنے والوں کا احتساب ضرور ہوگا تاکہ لوگ عبرت حاصل کرٰیں اور آئندہ جو بھی حکومت میں آئے وہ سرکاری خزانے میں لوٹ مار نہ مچائے ۔
اگرچہ عمران خان نے اس موقع پر ایک ہفتے کے دوران بد امنی کے دونوں بڑے واقعات کے بارے میں بات تو نہیں کی تاہم انہونے کوئٹہ میں خود کش حملے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے ملاقات کی جن میں ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے افراد بھی شامل تھے۔ وزیراعظم نے سانحہ ہزارگنجی میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ سانحہ ہزارگنجی میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر انہیں دلی افسوس ہے اور یہ انتہائی ظلم ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسانی جانوں کا کوئی نعم البدل نہیں ہے حکومت اس مشکل گھڑی میں ہزارہ قبیلہ اور دیگر اقوام کے شہید ہونے والے خاندانوں کے غم میں برابر کی شریک ہے۔ ان کا کہنا تھاکہ نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کرانا انتہائی ضروری ہے۔ حکومت ملک میں دہشت گردی اور انتہاءپسندی کا خاتمہ کرنے کیلئے پرعزم ہے۔
انہوں نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کا فرض بنتاہے کہ وہ اس ملک کے شہریوں کو مکمل تحفظ فراہم کریں اور انشاءاللہ ہم اس مشن کو پورا کریں گے اور وہ دن دور نہیں کہ ہم اس ملک میں اپنے عوام کو ایک پرامن ماحول فراہم کریں۔ انہوں نے کہا کہ ملک دشمن عناصرکی یہ کوشش ہے کہ وہ عوام کے درمیان تفرقات پیدا کریں اور افراتفری پھیلائیں لیکن ہم سب نے مل کر دشمن کے ناپاک عزائم کو ناکام بنانا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہماری افواج، سیکورٹی فورسز، پولیس، ایف سی اور عوام نے بے حد قربانیاں دی ہیں اور انہی قربانیوں کی بدولت آج سیکورٹی کی صورتحال میں بہتری آئی ہے۔ وزیراعظم نے شہداءکے خاندانوں کیلئے نیا پاکستان ہاوسنگ سکیم میں 5 فیصد کوٹے کااعلان بھی کیا۔

مصنف کے بارے میں

محمد کاظم سینئر صحافی ہے اور میڈیا کے معروف اداروں سے ایک عرصہ سے منسلک چلے آ رہے ہیں

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*