.....................
Download WordPress Themes, Happy Birthday Wishes
HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » خبریں » ایران کا یورنینم کی افزدوگی دوبارہ شروع کرنے کا اعلان

ایران کا یورنینم کی افزدوگی دوبارہ شروع کرنے کا اعلان

پڑھنے کا وقت: < 1 منٹ

ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ اگر عالمی طاقتوں نے جوہری معاہدے کے تحت اپنے وعدوں کی پاسداری نہ کی تو ایران اعلیٰ سطح کے یورنینم کی اعلیٰ سطح کی افزدوگی کا عمل دوبارہ شروع کردے گا۔

ٹیلی ویژن پر نشر ہونے والے اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ معاہدے پر دستخط کرنے والے دوسرے ملک جن میں برطانیہ، فرانس، جرمنی ،چین اور روس شامل ہیں کے پاس ساٹھ دن کا وقت ہے کہ وہ اپنے وعدوں پرعملدرآمد کریں تاکہ ایران کے تیل اور بنکاری کے شعبے کو امریکی پابندیوں سے محفوظ بنایا جاسکے۔

ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایران نے امریکا کی جانب سے جوہری معاہدے کی دو تجارتی استثنیٰ میں توسیع نہ دینے پر پہلی مرتبہ باقاعدہ طور پر معاہدے سے جزوی دستبرداری کا اعلان کردیا۔

خبررساں ادارے ’اےایف پی‘ کے مطابق تہران نے معاہدے کے فریقین ممالک برطانیہ، روس، چین، فرانس اور جرمنی پرواضح کردیا کہ وہ ایران پر عائد امریکی پابندیوں کا حل تلاش کرے۔

تہران نے فریقین ممالک کو 60 دن کی مہلت دیتے ہوئے واضح کیا کہ اگر وہ ایرانی بینکنگ اور خام تیل کی تجارت سے منسلک شبعوں پر عائد پابندی ختم کرانے میں ناکام ہوتے ہیں تو تہران معاہدے کی مزید شرط سے دستبردار ہوجائےگا۔

اس حوالے سے ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا کہ ’ہم سمجھتے ہیں کہ معاہدے کو عمل جراحی (سرجری) کی ضرورت ہے اور برسوں کی نفرنت سے کوئی نتائج نہیں نکلے‘۔

کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئےان کاکہنا تھا کہ ’سرجری کا مقصد معاہدے کو محفوظ بنانا ہے ناکہ تباہ کرنا‘۔

ایران کے وزیر خارجہ جاوید ظریف نے زور دیا کہ ایران کا ردعمل جوہری معاہدے کے منافی نہیں اور اقوام متحدہ کے انسپکٹر بھی تہران کے موقف کی حمایت کرچکے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*