.....................
HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » خبریں » اقتصادیات » ڈالر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح 148 روپے کا ہو گیا

ڈالر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح 148 روپے کا ہو گیا

پڑھنے کا وقت: 2 منٹ

ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کا رجحان جاری ہے اور آج (جمعرات کو) انٹربینک میں ڈالر کی قیمت میں 6 روپے سے زائد کا اضافہ ہوگیا۔
ٹریڈنگ کے دوران انٹربینک میں دن کے آغاز پر ڈالر کی قیمت 141.50 روپے تھی، جو اب بڑھ کر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح 148 روپے ہوگئی۔
انٹربینک میں ڈالر کی قیمت ریکارڈ 148 روپے تک پہنچ گئی، جس کے مزید بڑھنے کے امکانات ہیں جبکہ انٹربینک مارکیٹ میں اتنے زیادہ اضافے کے بعد اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی فروخت مکمل بند ہوگئی۔
ماہرین کے مطابق ڈالر کی قدر میں اضافہ اور روپے کی قدر میں جاری کمی کی وجہ آئی ایم ایف اور پاکستان کے درمیان ہونے والا حالیہ معاہدہ ہے، جس کے بعد مارکیٹ میں غیر یقینی صورت حال پیدا ہوگئی ہے۔
اس حوالے سے صدر فوریکس ایسوسی ایشن ملک بوستان نے ڈان نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈالر کی قیمت میں اضافے کی بنیادی وجہ روپے کی قدر میں 15 سے 20 فیصد کمی کی افواہیں ہی ہیں۔
ملک بوستان نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ڈالر کو بے یار و مدد گار نہیں چھوڑنا چاہیے تھا، کیونکہ انٹربینک میں ڈالر کی قیمت میں اضافے کے ساتھ ہی ملک میں مہنگائی میں اضافہ ہوتا ہے۔
اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ڈالر کی قیمت میں اضافے کی وجہ سے حکومت کی ساکھ بھی خراب ہوتی ہے، تاہم حکومت کو اسے حد میں رکھنا ہوگا۔
انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 23 سال کے اندر پاکستان سے ایک سو 60 ارب ڈالر باہر گئے جبکہ ملک قرضہ اس وقت 100 ارب روپے ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ لوگوں کا اتنی بڑی تعداد میں پیسہ باہر پڑا ہوا ہے، تاہم حکومت کو چاہیے کہ وہ لوگوں کو قائل کرے اور یہ تمام پیسہ ملک میں واپس لائے اور قسطوں میں شامل کرے جس کے ساتھ پاکستان کو قرضہ لینے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*