.....................
Download WordPress Themes, Happy Birthday Wishes
HTV Pakistan

ادب

سفید لباس اور دھیمی خوشبو کی رسیا ارم صبا سے گفتگو

انٹرویو: منصور مہدی ….. سفید لباس اور دھیمی خوشبو کی رسیا ارم صبا کو بچپن سے ڈائری لکھنا کا شوق تھا۔ کتابوں کے درمیان ہی پلی بڑھی۔ ان کا کہنا ہے کہ مجھے لگتا ہے کہ یہ کتابیں مجھ سے براہ راست باتیں کر رہی ہیں، آجکل واصف علی واصف کی کتابیں شوق سے پڑھتی ہوں،ان کی کتابیں مجھے میرے ...

مزید پڑھیں »

جموں اور کشمیر کا ادب، خصوصی نشست اور مشاعرے کا اہتمام

خصوصی رپورٹ طارق کامران رانا…. بزمِ وارث شاہ اور انگلش لٹریری سوسائٹی نے جموں اور کشمیر کے ادب کے حوالے سے ایک خصوصی نشست اورر مشاعرے کا اہتمام بھی کیا۔ صدارت رُستم خان نے کی،جبکہ مہمانانِ خصوصی ڈاکٹرکنول فیروز، پروفیسر انوار الحق، روبیہ جیلانی، محمد طفیل اور شفقت علی شاہ تھے۔ اس موقعہ پراظہار خیال کرنیوالوں کا کہنا تھاکہ تخلیقی ...

مزید پڑھیں »

تعاون …… سعادت حسن منٹو

سعادت حسن منٹو ……. چالیس پچاس لٹھ بند آدمیوں کا ایک گروہ لوٹ مار کیلئے ایک مکان کی طرف بڑھ رہا تھا۔ دفعتاً اس بھیڑ کو چیر کر ایک دبلا پتلا ادھیڑ عمر کا آدمی باہر نکلا۔ پلٹ کر اس نے بلوائیوں کو لیڈرانہ انداز میں مخاطب کیا۔ “بھائیو، اس مکان میں بے اندازہ دولت ہے، بے شمار قیمتی سامان ...

مزید پڑھیں »

سفرنامہ ….. کلاکوٹ سے روہتاس ….. محمد صفدر ٹھٹھوی

محمد صفدر ٹھٹھوی ….. سفر کے بغیر زندگی ادھوری ہے۔ ہر انسان زندگی میں مختلف سفر کرتا ہے۔ قدرت کے حسین رنگوں کو دیکھنے اور تاریخ کو سمجھنے کے لیے ہم سفر کرتے ہیں۔ ان اسفار میں پیش آنے والے مشاہدات وواقعات اور دیکھے ہوئے مقامات کا بیان اور ان کی تاریخ رقم کرنا اہم جُز ہوتا ہے۔ میں نے ...

مزید پڑھیں »

راجدھانی ایکسپریس، حصہ اول …… ڈاکٹر سلیم خان

انتساب مرنجان مرنج رفیق و دمساز مولانا ارشد سراج الدین مکی صاحب کے نام جن کا اور میرا ساتھ اس کتاب کے چنگو اور منگو جیسا ہے چنگو اور منگو کی اس داستان میں بیان کردہ واقعات اور کردار حقیقی نہیں خیالی ہیں ان کی مشابہت اتفاقی ہے۔ اس لیے کہ وہ کسی کے بھی بارے میں کچھ بھی کہتے ...

مزید پڑھیں »

راجدھانی ایکسپریس، حصہ دوم ……. ڈاکٹر سلیم خان

نوجوان شاہ جی کے شرن میں پہنچے تو وزیر انسانی وسائل نے چین کا سانس لیا اور جئے پور میں موجود اپنے جیوتش کے آشرم کی جانب چل پڑیں۔ شاہ جی نے ایک عرصے کے بعد جب چند نوجوانوں کو اپنے دفتر میں آتے دیکھا تو بہت خوش ہوئے۔ انہوں نے کہا فرمائیے میں آپ کی کیا خدمت کر سکتا ...

مزید پڑھیں »

تابوت، حصہ اول ……. ڈاکٹر سلیم خان

یاسر نے ممبئی کے تاج ہوٹل کا نام سن رکھا تھا اس کا ارادہ وہاں رک کر آگے کی منصوبہ بندی کرنا تھا۔ سچ تو یہ ہے کہ سب کچھ اس قدر تیزی کے ساتھ ہو گیا تھا کہ اسے کچھ غور و خوض کا موقع ہی نہیں ملا۔ وہ غصے میں اس قدر باؤلا ہوا جا رہا تھا کہ ...

مزید پڑھیں »

تابوت، حصّہ دوم …….. ڈاکٹر سلیم خان

کیلگیری میں نادرہ کا چہیتا گھوڑا پہنچ چکا تھا۔ یاسر اس انعامی مقابلے کی منصوبہ بندی کر رہا تھا جس سے اس کو مقبولیت حاصل کرنی تھی۔ اخبار میں دیا جانے والا اشتہار تیار کر کے اس نے کیلگیری کے دو بڑے اخبارات کیلگیری پوسٹ اور کناڈا ایج کو ای میل سے روانہ کیا۔ اس کا نرخ دیکھ کر کریڈٹ ...

مزید پڑھیں »

بسیرا ………… نوشاد عادل

شہر خموشاں کے رہنے والے ابدی نیند سو رہے تھے اور رات کے وقت قبرستان کا منظر کیسا ہوتا ہے یہ تو وہی جانتے ہیں جنہیں رات کے وقت قبرستان میں جانے کا اتفاق ہوا ہو، اور وہ بھی اکیلے۔ یہ قبرستان بہت پرانا معلوم دیتا تھا۔ اس کی چار دیواری جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ گئی تھی۔ قبرستان کے ...

مزید پڑھیں »

خوف …………… نوشاد عادل

ایک طویل سسکاری اس کے حلق سے خارج ہو گئی، وہ بری طرح ہانپنے لگا۔ اس کی کنپٹی سے پسینے کی بوندیں بہہ بہہ کر ٹھوڑی کے نیچے جمع ہونے لگیں۔ گرمی کی حدت اسے اس حد تک محسوس ہو رہی تھی، جیسے اس کے قریب آگ کا بہت بڑا لاؤ روشن ہو اور وہ اس کی تپش سے بری ...

مزید پڑھیں »